321

انڈیا نہتے کشمیریوں پر ظلم بند کرے, مقبوضہ وادی سے اپنی فوج واپس بلائے اور 5 اگست 2019 سے پہلے والا سٹیٹس بحال کرے ای یو پاک فرینڈشپ فیڈریشن اور پشتون آرگنائزیشن کے زیر اھتمام احتجاجی مظاہرے سے مقررین کے خطاب میں مطالبہ

برسلز(مرزا عمران بیگ) ای یو پاک فرینڈشپ فیڈریشن اور پشتون آرگنائزیشن کے زیر اہتمام مقبوضہ کشمیر میں جاری ظلم و بربریت اور آٹھ لاکھ سے زائد بھارتی مسلح افواج کے زریعے نہتے کشمیریوں کی نسل کشی کی مذموم سازش کے خلاف وزار ت خارجہ اور یورپی کمیشن کے سامنے بھر پور مظاہرہ کیا گیا جس میں انسانی ہمدردی رکھنے والے لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی ای یو پاک فرینڈشپ فیڈریشن کے چیئر مین چوہدری پرویز اقبال لوسر نے اپنے خطاب میں کہا کہ انڈیا پوری دنیا کے سامنے بے نقاب ہو چکا ہے عالمی برادری مظلوم کشمیریوں پر ہونے والے مظالم سے آگاہ ہو چکی ہے جس کا ثبوت یورپی اراکین پارلیمنٹ کا خط ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ نہتے کشمیریوں پر ظلم بند کیا جائے اور اس مسئلہ کو حل کیا جائے ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ انڈیا آئینی ترمیم واپس لے اور مقبوضہ کشمیر کا
5 اگست 2019 سے پہلے والا سٹیٹس بحال کرے ہم اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک کشمیر کی آئینی حیثیت 5اگست 2019 سے پہلے والی نہیں ہو جاتی۔5 اگست 2019ء کا دن نریندر مودی حکوت کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدام بھارت کے جمہوری ماتھے پر کلنک کا ٹیکہ ہے پشتون آرگنائزیشن یورپ کے صدر عرب گل مولا گوری نے مظاہرین سے خطاب میں کہا کہ انڈیا نے بزور طاقت شہریت کے قانون میں ترمیم کر کے مقبوضہ وادی سے آبادی کے تناسب کو بدلنے کی گھٹیا سازش کی ہے اس ترمیم کی آڑ میں تاریخی حقائق کو بدلا جا رہا ہے اور یہ ظالمانہ شہریت بل کشمیر کے مسلمانوں کے خلاف ایک گہری سازش ہے مودی حکومت اپنی قابض فوج کے ذریعے انسانی حقوق کی بدترین پامالی کی مرتکب ہے ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ انڈیا اپنے فوج واپس بلائے اور مذموم شہرت بل واپس لیتے ہوئے مقبوضہ وادی کا 5 اگست 2019 سے پہلے والا سٹیٹس بحال کرے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا اختیار دیا جائے نوید خان چیئر مین پشتون آرگنائزیشن یورپ نے اپنے خطاب میں کہا کہ مودی حکومت نہتے کشمیریوں پر ہر وہ ظلم کر رہی ہے جو انسانی سوچ میں آسکتا ہے انسانی حقوق کی تنظیموں اور عالمی اداروں کو فوری نوٹس لے اور انسانی حقوق کو بحال کرائے ۔ دیگر مقرین نے نے کہا آج جب پوری دنیا ”کورونا“کی عالمی وبا سے نبردآزما ہے۔ بھارت کورونا کے حفاظتی اقدامات کی آڑ میں کشمیریوں پر مظالم کے پہاڑ توڑ رہا ہے۔ عالمی برادری نے بھارت کی اس دہشت گردی کا اس طرح نوٹس نہیں لیا جس طرح لینا چاہیئے۔
اس موقع پر مظاہرین نے دہشت گرد دہشت گرد بھارت دہشت گرد، بھارتی فوج واپس جائے، ہم کیا چاہتے آزادی،دہشت گرد دہشت گرد مودی دہشت گرد کے فلک شگاف نعرے بلند کئے،مظاہرہ میں چوہدری خلیل، بشارت چوہان، ظفر چیئرمین، انعام اللہ بھٹی پاکستانی یورپین اسٹوڈنٹس اور جمیل خان صدر پشتون آرگنائزیشن بیلجم نے خصوصی شرکت کی اس احتجاجی مظاہرے میں نوید خان چیئرمین پشتون آرگنائزیشن کے دس سالہ بیٹے امان خان نے بچوں کی نمائندگی کرتے ہوئے پانچ زبانوں میں تقریر کر کے اپنا موقف واضح کیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں