88

اگر حکومت کے پاس روزگار کے وسائل کم ہیں تو مقامی لوگوں کو اپنی مدد آپ کے تحت مقامی وسائل کے استعمال کے لئے سہولیات فراہم کی جائیںگورنر ، پنجاب چوہدری سرور کے ساتھ پشتون رہنماؤں کی ملاقات

گورنر پنجاب چوہدری سرور کے ساتھ پشتون رہنماؤں کی ملاقات, قبائلی علاقہ کے مسائل, صوبہ پنجاب میں پشتونوں کے ساتھ امتیازی سلوک اور نادرا کا پشتونوں کو بے جا تنگ کرنے کے ایشوز پر بات ہوئی,گورنر کی مسائل کے حل کی یقین دہانی
برسلز(مرزا عمران بیگ) گورنر پنجاب چوہدری سرور کے خصوصی دورہ بیلجیم کے دوران پشتون آرگنائزیشن یورپ کے ایک وفد نے برسلز میں ملاقات کی اور اس ملاقات میں پشتون آرگنائزیشن یورپ کے صدر عرب گل مولا گوری,بیلجم برانچ کے صدر جمیل خان اور فرانس برانچ کے صدر انعام اللہ خان شامل تھے پشتون رہنماؤں نے گورنر پنجاب کو قبائلی علاقہ جات کے مسائل کی نشاندہی کرتے ہوئے بتایا کہ پشتون قبائل پر مشتمل یہ علاقہ جات پاکستان کے دیگر علاقوں سے بہت زیادہ پسماندہ ہیں اور اس جدید دور میں صحت تعلیم کی سہولیات جو ان کا بنیادی حق ہے ان سے محرومی کا شکار ہیں پانی جیسی بنیادی ضرورت سے ابھی تک ترس رہے ہیں رابطہ سڑکوں کا فقدان ہے اور بے روزگاری عروج پر ہے حکومت ان علاقہ جات کی محرومیوں کا ازالہ کرے اور خاص طور پر بے روزگاری کے حل کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں یہ علاقہ قدرتی معدنیات سے مالا مال ہے خاص طور پر یہاں کا سنگ مر مر کا شمار دنیا کی بہترین معدنیات ہیں ہوتا ہے اور اس کی عالمی سطح پر بڑی مانگ ہے اگر حکومت کے پاس روزگار کے وسائل کم ہیں تو مقامی لوگوں کو اپنی مدد آپ کے تحت مقامی وسائل کے استعمال کے لئے سہولیات فراہم کی جائیں اور حکومت معدنیات کے کاروبار کے فروغ ِِ کے لئے ان کی رہنمائی کرے تو مقامی وسائل کے استعمال سے بے روزگاری کا خاتمہ ہوگا اور اس پسماندہ علاقے کی قسمت بدل سکتی ہے صوبہ پنجاب میں ایک اہم ایشوء کی نشاندہی کرتے ہوئے وفد نے گورنر کو بتایا کہ یہاں پر پشتونوں کے ساتھ لسانی بنیادوں پر ناروا سلوک کیا جاتا ہے اگر اس روش کو کنٹرول نہ کیا گیا تو ڈر ہے کہ کہیں پاکستان کے دشمن عناصر اس کو غلط رنگ دے کر نا جائز فائدہ نہ اٹھائیں
اور اسی طرح کا سلوک شناختی کارڈ کے اجراء اور پشتونوں کی دوہری شہریت کے سلسلہ میں نادرا کی طرف سے بھی رکھا جا رہا ہے ا س پر حکومت توجہ دے پشتون رہنماؤں نے گورنر کو یاد دلاتے ہوئے کہا کہ آپ یورپ میں پاکستان کے سافٹ امیج کو بہتر بنانے کے لئے دوسری بار آئے ہیں اور اس دورے کا مقصد یورپین اداروں اور کیمونٹی میں پاکستان کے بارے میں پائے جانے والے منفی سوچ کو تبدیل کرنا ہے اور اگر آپ ایسے اقدامات کریں کہ معاشرے میں کوئی طبقہ محرومی کا شکار نہ ہو ان کے مسائل حل کئے جائیں تو یقینا پاکستان امن آتشی کا گہوارا ان جائے اور حکومتوں کو اپنے امیج کے بہتری کے لئے ان کے پاس نہ آنا پڑے
گورنر پنجاب نے پشتون آرگنائزیشن کے وفد کو ان مسائل کے حل کی یقین دہانی کرواتے ہوئے وعدہ کیا کہ قبائلی علاقہ جات کے دور دراز علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے لئے وہ حکومتی سطح سے ہٹ کر اپنی فلاحی تنظیم سرور فاوئنڈیشن کی طرف سے وسائل فراہم کریں گے اور پنجاب میں پشتونوں کی شکایات کے ازالے کے لئے جو کچھ ہو سکا کریں گے اور خاص طور پر نادرا کی طرف سے پشتونوں کے مسائل میں آسانی کے لئے وفاقی حکومت سے بات کریں گے آخر میں گورنر پنجاب نے پشتون آگنائزیشن یورپ کی پاکستان کیلئے خدمات پشتونوں کے مسائل کے حل, مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنا اور پاکستان اور پاک مسلح افواج کے بہتر امیج کے لئے کوششوں کو سراہا اور ہر ممکن تعاون کی یقین دھانی کرواتے ہوئے کہا کہ ان کوششوں کو جاری رکھیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں