29

پیشہ ورانہ ساکھ کیسے قائم کی جائے؟

پیشہ ورانہ ساکھ کیسے قائم کی جائے؟

چاہے ذاتی زندگی ہو یا پیشہ ورانہ، پرسنل برانڈنگ ہم سب کے لیے ایک بڑا اثاثہ ہوتا ہے۔ پرسنل برانڈنگ کی بنیاد آپ کی ساکھ (جسے انگریزی میں ہم ریپیوٹیشن کہتے ہیں) پر ہوتی ہے۔ پیشہ ورانہ زندگی میں آگے بڑھنے اور ترقی پانے کا دارومدار اسی بات پر ہوتا ہے، یعنی اگر آپ کی ساکھ اچھی ہے، آپ سینئرز کو اپنی صلاحیتیں دکھاچکے ہیں اور وہ آپ کی صلاحیتوں کےمعترف ہیں، تو ایسے میں اس بات کے امکانات بڑھ جاتے ہیں کہ آپ کی صلاحیتوں سے میل کھاتے پروجیکٹس اور اسائنمنٹس کسی اور کو دینے کے بجائے آپ کو ہی دیے جائیں گے۔

اس طرح مسابقت کے اس دور میں آپ اپنے حریفوں سے آگے رہتے ہیں۔ ہارورڈ بزنس رِیویو اور سینٹر فار ٹیلنٹ انوویشن کی سِلوِیا این ہیولِٹ کی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی کہ ’پرسنل برانڈ‘ بنانے والی خواتین کے اپنی ہم عصر دیگر پروفیشنل خواتین کے مقابلے میں ترقی پانے کے امکانات 23فیصد زیادہ ہوتے ہیں۔

جو لوگ اپنا ’پرسنل برانڈ‘ بنانے میں کامیاب رہتے ہیں، وہ پیشہ ورانہ زندگی میں کسی خراب دور سے زیادہ آسانی سے نکل کر آگے بڑھ جانے میں کامیاب رہتے ہیں۔ ہرچند کہ، بات کرنے میں پرسنل برانڈنگ ایک زبردست اور پرکشش شے معلوم ہوتی ہے لیکن پیشہ ورانہ زندگی میں لوگوں کے لیے پرسنل برانڈ بنانا اتنا آسان نہیں ہوتا۔

تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ لوگوں کو پیشہ ورانہ زندگی میں ایک خاص مرحلے سے گزرنا پڑتا ہے، جسے انگریزی میں ’لائیک ایبلیٹی کوننڈرم‘کے نام سے پکارا جاتا ہے یعنی توقع رکھی جاتی ہے کہ وہ موزوں، گرمجوش اور مشفق ہوں گے۔

اگر آپ کے ادارے میں چھانٹی کا فیصلہ کیا جاتا ہے تو اس بات کا زیادہ امکان ہوتا ہے کہ آپ اپنے ’پرسنل برانڈ‘ کی بدولت اس عمل سے محفوظ رہیں گے اور خدانخواستہ اگر آپ اس چھانٹی کی زد میں آگئے تو بھی حریف ادارہ کسی اور شخص کے مقابلے میں آپ کو ہاتھوں ہاتھ اپنے ہاں نوکری کی پیشکش کرنے میں زیادہ دیر نہیں لگائے گا۔

اب سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ آپ بطور ایک پروفیشنل، لائیک ایبلیٹی کننڈرم کے مرحلے سے بچ بچا کر کس طرح آگے بڑھ سکتے ہیں اور کس طرح اپنا مثبت اور مضبوط پرسنل برانڈ بناسکتے ہیں؟ ہارورڈ بزنس ریویو کی تحقیق میں سہ رُخی حکمت عملی اختیار کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

نیٹ ورکنگ

آپ کو اپنے ادارے کے اندر اور باہر نیٹ ورکنگ کرنے کی ضرورت ہے۔ تاہم، ذہن نشین کرنے کی بات یہ ہے کہ بہت سارے لوگ اپنی ساری توانائیاں اور صلاحیتیں بانڈنگ کیپٹل تخلیق کرنےپر صرف کردیتے ہیں اور’بِرجِنگ کیپٹل‘ کی اہمیت کو بالکل نظرانداز کردیتے ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہوا کہ وہ ادارے میں اور ادارے سے باہر ایسے افراد کے ساتھ تعلقات استوار کرنے کی کوشش کرتے ہیں، جو انہی کی طرح کے ہوتے ہیں اور ادارتی ڈھانچے میں انہی کی سطح پر کام کررہے ہوتے ہیں۔

وہ اپنے سے مختلف اور اعلیٰ درجے پر فائز بہت کم افراد سے تعلقات استوار کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ یہ وہ غلطی ہے جو آپ نہ کریں کیونکہ یہ غلطی آپ کے کیریئر کی ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ اور ناقابل تلافی غلطی بن کر سامنے آسکتی ہے۔ اس کا نقصان یہ ہوگا کہ مستقبل میں آپ کے ڈپارٹمنٹ میں تنظیمِ نو یا چھانٹیوں کی صورت میں، ایسے کم لوگ ہوں گے جو آپ کی صلاحیتوں کے بارے میں اعلیٰ قیادت کو آگاہ کرسکیں گے۔ ہمیشہ ایسی نیٹ ورکنگ قائم کریں، جو صورتِ حال تبدیل ہونے پر آپ کے کام آسکے۔

دوسروں کو اپنا کام بتائیں

ہم اکثر یہ سمجھتے ہیں کہ اگر ہم محنت کرتے رہیں گے تو لوگ وقت کے ساتھ کارکردگی کا نوٹس لے لیں گے۔ یاد رکھیں، آپ اپنے اندر کیا صلاحیتیں رکھتے ہیں، آپ کیا کرتے ہیں یا کیا کرسکتے ہیں؟ اس بارے میں کسی کو خودبخود اِلہام نہیں ہوسکتا۔ اس دور میں ہر شخص اپنی زندگی اور اپنے کاموں میں اتنا مصروف رہتا ہے کہ اسے کسی اور کی صلاحیتوں کا نوٹس لینے کا وقت نہیں ملتا۔ ایسے میں یہ سوچنا کہ دیگر افراد خودبہ خود آپ سے متعلق مثبت بیانیہ تشکیل دینگے، سراسر خام خیالی ہوگی۔

آپ اپنی صلاحیتوں، ماضی کی کامیابیوں اور مستقبل کے ارادوں سے دوسروں کو آگاہ کرنے کے مواقع پیدا کریں اور انھیں بتائیں کہ آپ موجودہ پوزیشن میں ادارے کے لیے کیا کرتے ہیں اور مزید مواقع ملنے پر اور کیا کرسکتے ہیں؟ اس طرح آپ نے کیریئر میں جن مختلف عہدوں پر کام کیاہے، ان میں ربط تلاش کریں اور انھیں ایک جگہ تحریری شکل میں لے آئیں، اس طرح جب کبھی کوئی آپ سے کیریئر کے بارے میں سوال کرے گا تو آپ کو جواب ینے میں وقت نہیں لگے گا۔ آپ اپنے متاثرکن جواب سے بیٹھے بٹھائے اپنے لیے ترقی کے نئے مواقع پیدا کرسکتے ہیں۔

آئیڈیاز کا اظہار کریں

اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ آپ کا کام خود بولے گا تو یہ بات صرف ان لوگوں کی حد تک ہی ٹھیک ہے، جو آپ کے ساتھ کام کرتے ہیں، تاہم ایسے لوگوں کی تعداد محدود ہوتی ہے۔ دیگر ڈپارٹمنٹس یا اعلیٰ افسران آپ کی کارکردگی سے بے خبر ہی رہیں گے۔ کئی افراد اپنی کامیابیوں کے بارے میں دوسروں سے بات کرنا اچھا نہیں سمجھتے، اور خودنمائی سے دور رہتے ہیں۔

اگر آپ بھی ایسی شخصیت کے مالک ہیں تو آپ کئی اور طریقوں سے اپنی صلاحیتوں کا اظہار کرسکتے ہیں، آپ اپنی صنعت اور شعبے کے بارے میں اپنا علم اور معلومات دوسروں اور اپنے اعلیٰ افسران تک پہنچا سکتے اور اپنی صلاحیتوں کے بارے میں انھیں مطلع کرسکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں